2

الخدمت فاؤنڈیشن کے تحت ملک بھر میں عالمی یومِ آب منایا گیا

لاہور: دنیا بھر میں 22 مارچ پانی کے عالمی دن کے طور پر منایا جاتا ہے ۔جس کا مقصددنیا کو آلودہ پانی سے ہونے والی بیماریوں ، نقصانات اور صاف پانی کی اہمیت کے حوالے سے آگاہی دینا ہے۔ اسی سلسلے میں الخدمت فاؤنڈیشن پاکستان نے بھی پانی کے عالمی دن کو بھر پورانداز میں منانے کا فیصلہ کیا۔الخدمت فاؤنڈیشن کے تحت 22 مارچ کو’’صاف پانی ۔۔۔ محفوظ زندگی‘‘ کے عنوان کے تحت ملک بھر میں سیمینارز،آگاہی واک اور تصویری نمائش کا اہتمام کیا گیا۔لاہور میں اس حوالے سے ملتان چونگی تا ہاتھی چوک خصوصی آگاہی واک کا انعقاد کیا گیا جس میں الخدمت کے ذمہ داران اور سکول کے سینکڑوں بچوں سمیت معززینِ علاقہ کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔نیشنل ڈائریکٹرصاف پانی پروگرام الخدمت فاؤنڈیشن پاکستان سید راشد داؤد نے اس موقع پرکہا کہ یہ دن منانے کا مقصد عوام الناس میں پینے کے صاف پانی کی اہمیت اور اسے محفوظ بنانے کے حوالے سے شعور اجاگر کرنا ہے۔پانی کی قلت،آلودہ پانی اور اُس سے ہونے والے نقصانات کے پیشِ نظر الخدمت فاؤنڈیشن ملک بھر میں آگہی مہم کے ساتھ ساتھ شہروں اور دور دراز پسماندہ علاقوں میں صاف پانی کے منصوبوں پربھی کام کر رہی ہے جس کا مقصد عوام الناس کو گھروں کے قریب پینے کے صاف پانی کی سہولت فراہم کرنا ہے۔الخدمت فاؤنڈیشن شہری علاقوں میں جدید واٹر فلٹریشن پلانٹ کی تنصیب ، تھر پارکر، اندرون سندھ ، بلوچستان، پنجاب اور خیبر پختونخوا کے دور دراز اور پسماندہ علاقوں میں کنویں کھدوانے اور کمیونٹی ہینڈ پمپ لگانے کا کام ، آزاد کشمیر اور خیبر پختونخوا میں’’ گریوٹی فلو واٹر سکیم‘‘ اور بلوچستان میں کاریز کے ذریعے بھی پینے کا صاف پانی فراہم کررہی ہے۔ اس وقت الخدمت کے تحت ملک بھر میں 97 واٹر فلٹریشن پلانٹ،1697 کنویں ،4849 ہینڈ پمپ،517سب مرسبل واٹر پمپ،118 گریوٹی فلو واٹر سکیم اور504دیگر منصوبہ جات کام کر رہے ہیں اور اِن صاف پانی کے منصوبوں سے روزانہ قریباََ18 لاکھ افراد مستفید ہوتے ہیں۔
0 replies

Leave a Reply

Want to join the discussion?
Feel free to contribute!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

You may use these HTML tags and attributes: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>